تصور کرو 
جان لینن کی نظم "imagine" کا اردو ترجمہ 

تصور کرو 
کہ یہاں کوئی جنت نہیں 
بہت آسان ہے اگر تم کوشش کرو 
کہ نہ ہمارے قدموں تلے کوئی جہنم ہو 
اور سر پر صرف آسمان 

تصور کرو
کہ ہم سب لوگ 
بس آج اس لمحہ موجود میں 
زندہ ہیں

تصور کرو 
جہاں کوئی سرحدیں ہی نہ ہو  
ایسا کرنا کوئی مشکل بھی نہیں 
کہ جہاں قتل کرنے یا 
مرنے کے لئے کچھ وجہ نہ ہو  
اور کوئی مذہب بھی نہیں

تصور کرو 
کہ جہاں سب لوگ 
امن سے زندگی گزاریں

تم شاید کہو 
کہ میں ایک خواب بُننے والا ہوں 
لیکن صرف میں ہی اکیلا تو نہیں 
مجھے امید ہے 
ایک دن تم بھی میرے ساتھ ہوگے 
اور یہ دنیا ایک ہوجائے گی    

تصور کرو 
کہ جہاں کچھ کسی کی ملکیت نہ ہو 
اگر تم ایسا کرسکتے ہو تو
کہ جہاں لالچ یا بھوک سے 
کسی کو غرض نہ ہو
جہاں سب ایک برداری بن جائیں
تصور کرو کہ سب لوگ 
اس دنیا میں ایک ہوجائیں گے

تم شاید کہو 
کہ میں ایک خواب بننے والا ہوں 
لیکن صرف میں ہی اکیلا تو نہیں 
مجھے امید ہے 
ایک دن تم بھی میرے ساتھ ہوگے 
اور یہ دنیا ایک ہوجائے گی

0
0
0
s2smodern

Add comment


Security code
Refresh